127

ڈانس اینڈ میوزک میں پی ایچ ڈی کرنے والی پہلی پاکستانی نژاد لڑکی

پاکستانی خواتین کے بارے میں بیرون ملک یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ ان کو چار دیواری میں قید کر کے رکھا جاتا ہے اور ان کو اپنے خیالات کے اظہار کے مواقع فراہم نہیں کئے جاتے جبکہ پاکستان کی تاریخ اس کے بر عکس ہے۔قیام پاکستان کے وقت سے ہر شعبہ میں خواتین کا ایک خاص کردار رہا ہے انہوں نے مردوں کے شانہ بشانہ کام کر کے ملک و قوم کی ترقی میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ بیرون ملک جا کر کوئی پاکستانی بڑا اعزاز حاصل کرے تو اہل وطن کا سر فخر سے بلند ہو جاتا ہے اس ہی طرح ایک پاکستانی نژاد پُرتگالی لڑکی شاکرہ نندنی (جو سابقہ ماڈل بھی ہیں) نے گوٹنبرگ یونیورسٹی سے ڈانس اینڈ میوزک میں پی، ایچ، ڈی کی ڈگری حاصل کرکے نہ صرف پہلی پاکستانی خاتون ہونے کا اعزاز حاصل کیا بلکہ پاکستان میں اور پاکستان سے باہر لوگوں کا س فخر سے بلند کیا ہے۔
شاکرہ نندنی نے سوئیڈن کے مقامی اخبارکوانٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ” میں ان عورتوں میں سے ہوں جنہوں نے انتھک محنت کرکے عام خواتین کے راستے ہموار کئے ہیں اور مجھے اس بات کا فخر بھی ہے۔ مزید کہا کہ حق چھیننے سے ملتا ہے کوئی بھی آپ کو پلیٹ میں رکھ کر نہیں دیتا میں نے ماڈلنگ جیسے خاردار راستے میں قدم رکھا اور ایک پل کےلئے بھی نہیں گھبرائی۔ یہ ایک ایسا کام ہے جس کو خواتین کرنے سے گھبراتی ہیں۔میں سمجھتی ہوں کہ کسی بھی عورت کو ڈر کے گھر نہیں بیٹھنا چاہیے ۔ یہ بات بھی سچ ہے کہ عورتوں کو قدم قدم پر مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے لیکن یہ ہی وہ وقت ہوتا ہے جب عورت اپنے آپ کو مضبوط کرتی ہے۔ مردوں کے اس معاشرے میں خواتین کو کمزور تصور کیا جاتا ہے لیکن میں یہ کہوں گی کہ پاکستانی خواتین کی صلاحیتوں کو کسی طور بھی کم نہیں سمجھنا چاہیے۔ پاکستانی عورت نامساعد حالات میں بھی ہمت نہیں ہارتی یہ ہی اس کی سب سے بڑی خوبی ہے۔ وری دنیا میں عورت آج بھی بااختیار نہیں ہے وہ اپنے حقوق کےلئے لڑ رہی ہے اور بااختیار بننے کی کوشش میں ہے ۔ جہاں تک پاکستانی عورت کی بات ہے تو وہ اپنی اہمیت سے آشنا ہے اسے معلوم ہے کہ اب ہاتھ پر ہاتھ دھر کر گھر بیٹھنے کا وقت نہیں ہے بلکہ ملکی ترقی کی دوڑ میں شامل ہونے کے لئے اسے تمام ایسی رکاوٹوں کو توڑ ڈالنا ہے جو اس کی آزادی اور ترقی میں حائل ہیں۔ پاکستانی خواتین اس ملک کی طاقت ہیں اور ہر جگہ اپنے ملک کا نام روشن کرتی ہیں ۔ پاکستانی عورتیں بہت بہادر ہیں اور ایسی کوئی چیز نہیں ہے جو انہیں روک سکتی ہے ۔ انہیں صرف اپنے آپ پر اعتماد کرنا ہے.