26

حکومت کا تنخواہ دار طبقے کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان

اسلام آباد : حکومت نے تنخواہ دار طبقے کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان کرتے ہوئے تنخواہ دار افراد ٹیکس آڈٹ سے مستثنیٰ قرار دے دیا۔
تفصیلات کے مطابق حکومت نے ٹیکس فری آمدنی کی حد میں اضافہ کے بعد تنخواہ دار طبقے کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ تنخواہ دار افراد کا ٹیکس آڈٹ نہیں ہوگا۔
اس کے علاوہ ایک مرتبہ آڈٹ کیلئے منتخب ہونے والوں کواگلے دو سال تک اور فائنل ٹیکس دینے والوں کو بھی آڈٹ سے چھوٹ دے دی گئی ہے۔
ایف بی آر نے 44 ہزار 8 سو38 ٹیکس دہندگان کو ٹیکس سال دوہزار سولہ کے آڈٹ کیلئے منتخب کر لیا گیا ہے، آڈٹ کیلئے انکم ٹیکس کارپوریٹ کے چودہ سو ننانوے، انکم ٹیکس نان کارپوریٹ کے چونتیس ہزار پانچ سو پندرہ اور فیڈرل ایکسائز کے بیس ٹیکس دہندگان کا آڈٹ کیا جائے گا۔
یاد رہے کہ وزارت خزانہ زرائع کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے آئندہ مالی سال کے لیے تنخواہ دار طبقے کیلئے سرسٹھ ارب کا ٹیکس ریلیف متوقع ہے جبکہ انکم ٹیکس سے مستثنی آمدنی کی سالانہ کو حد چار لاکھ روپے سے بڑھا کر پانچ لاکھ کیے جانے کا امکان ہے۔
تنخواہ دار طبقے پر انکم ٹیکس کی زیادہ سے زیادہ شرح کو بیس فیصد کیے جانے کا امکان ہے۔
معاشی ماہرین کے مطابق ٹیکس ریلیف سے کم آمدنی والے افراد پر ٹیکس کا بوجھ نوے فیصد جبکہ زائد آمدن والے افراد پر ٹیکس ریٹ میں تینتالیس فیصد کمی
ہوگی۔
واضح رہے کہ وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ امور مفتاح اسماعیل نے آئندہ مالی سال کا بجٹ 27 اپریل کو پیش کرنے کا اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ حکومت کی مدت 31 مئی کو ختم ہو جائے گی ، اس لئے حکومت کی کوشش ہے کہ وفاقی بجٹ جلد پیش کرکے اپنی ہی دور حکومت میں منظور کروالیا جائے۔
خیال رہے کہ یہ ن لیگ حکومت کا آخری بجٹ ہے ، اس لئے امید کی جارہی ہے کہ عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دیا جائے گا۔

اس خبرکوبھی پڑھیں:  نئے نوٹوں کی ایس ایم ایس کے ذریعے فراہمی آج سے شروع ہوگی

خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔
The post حکومت کا تنخواہ دار طبقے کیلئے ایک اور سہولت کا اعلان appeared first on ARYNews.tv | Urdu – Har Lamha Bakhabar.