48

آنتوں کے سرطان کو کینسر کی عام دوا ختم کرسکتی ہے، تحقیق

ایڈن برا: اسکاٹ لینڈ کے ماہرین نے موذی مرض کینسر کی دوا ایسپرن کا نیا فائدہ دریافت کرلیا۔
تفصیلات کے مطابق اسکاٹ لینڈ کے شہر ایڈن برا میں ہونے والی تحقیق کے دوران ایسپرن دوائی کا نہایت اہم فائدہ سامنے آیا اور وہ یہ کہ یہ دوا آنتڑیوں کے کینسر کو جڑ سے ختم کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔
یونیسورسٹی آف ایڈنبرا کے محققین نے دعویٰ کیا ہے کہ ایسپرن کولون کینسر، دل کے امراض اور ٹیومر کے لیے بہت مفید ہے، اس دوائی میں شامل کیمیکل اور اجزا ٹیومر بننے کے عمل کو روک دیتے ہیں۔
ماہرین کے مطابق قبل ازیں ایسپرن کے ٹیومر پر اثر انداز ہونے کے مثبت نتائج سامنے آئے تھے مگر اس بارے میں کچھ بھی نہیں کہا جاسکتا تھا البتہ حالیہ تحقیق کی رپورٹ میں دوائی کے اس فائدے نے ماہرین کو حیران کن کردیا۔
مزید پڑھیں: کینسر کا علاج ادویات سے دریافت

برطانوی ادارے کینسر ریسرچ سینٹر نے تحقیق کے نتائج سامنے آنے کے بعد یونیورسٹی کے ماہرین کے ساتھ موذی مرض کی روک تھام کے لیے عوامی سطح پر آگاہی مہم چلانے کا اعلان بھی کیا ہے۔
تحقیقاتی ماہرین نے انسانی سیل میں پائے جانے والے مادے کی بھی نشاندہی کی جسے نیوکلیئس کہا جاتا ہے اور یہ اگر جسم میں موجود پٹھوں میں سراہیت کرجائیں تو ٹیومر بننا شروع ہوجاتا ہے۔

ماہرین نے تحقیق کے دوران ٹیومر پر ایسپرن کے اثرات کا جائزہ لیا جس کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ ٹی آئی ایف نامی مالیکیول نیوکلئیس کی حرکت کو روکنے میں مددگار ثابت ہوئی۔
یہ بھی پڑھیں: ٹوتھ پیسٹ سے بڑی آنت کا کینسر ہونے کا انکشاف

اس خبرکوبھی پڑھیں:  ’پیٹ کا پھولے رہنا بیضہ دانی کے کینسر کی علامت‘

دوسری جانب تحقیقاتی ماہرین نے ساتھ ہی متنبہ بھی کیا ہے کہ اس دوائی کے مسلسل استعمال کے خطرناک اثرات مرتب ہوسکتے ہیں لہذا طبیب کے مشورے کو مدنظر رکھتے ہوئے اسے استعمال کیا جائے۔

خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں
The post آنتوں کے سرطان کو کینسر کی عام دوا ختم کرسکتی ہے، تحقیق appeared first on ARYNews.tv | Urdu – Har Lamha Bakhabar.