30

انٹر بورڈ میں بھرتیاں تحریری ٹیسٹ سے مشروط کرنے کا فیصلہ

 کراچی:  اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی کی انتظامیہ نے بھرتی پالیسی میں تبدیلی کرتے ہوئے مستقبل میں آفیسرزسمیت دیگراسامیوں پربھرتیوں کوتحریری ٹیسٹ سے مشروط کرنے کافیصلہ کیاہے اوریہ تحریری ٹیسٹ آئی بی اے کراچی یااین ٹی ایس سے کرانے پر غورکیاجارہاہے۔

انٹر بورڈ میں بھرتیاں تحریری ٹیسٹ سے مشروط کرنے کے فیصلے کی منظوری کے لیے بورڈ آف گورنرز کا اجلاس پیرکوطلب کیاگیاہے اوراس معاملے کواجلاس کے ایجنڈے میں شامل کرلیاگیاہے تاہم اسامیوں کوتحلیل کرکے نئی اسامیوں کی تخلیق کے معاملے پر بورڈ ملازمین اورافسران میں بے چینی پھیل گئی ہے اورملازمین کاکہناہے کہ بورڈ کے اس فیصلے سے ان کی ترقیاں رک جائیں گی اورفیصلے سے ان کی حق تلفی ہوگی جبکہ ملازمین ان اس پالیسی کے خلاف پیرکومتوقع طورپرانتظامیہ کیخلاف احتجاج کا عندیہ بھی دیاہے۔

’’ایکسپریس‘‘کومعلوم ہواہے کہ اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی کی انتظامیہ نے پیرکوہونے والے بورڈ آف گورنرکے اجلاس میں ادارے میں مختلف گریڈزکی مستقل اسامیوں پربھرتیوں کے لیے نیاطریقہ کارمتعارف کروانے کامعاملہ شامل کرلیاہے۔

نئے طریقہ کارکے تحت منظوری کی صورت میں بھرتیاں تحریری ٹیسٹ کی بنیادپرہی ہوسکیں گی جس کے لیے آئی بی اے کراچی یااین ٹی ایس کے نام تجویز کیے گئے ہیں تاہم ان نئی بھرتیوں سے قبل بورڈ کے شعبہ آڈٹ اوراکاؤنٹس میں گریڈ 16اور17کی کچھ اسامیوں کوپہلے تحلیل کیاجائے گااورانھی اسامیوں کوایک بارپھرتخلیق کرکے ان پربراہ راست بھرتیاں کی جائیں گی ۔

ذرائع کاکہناہے کہ بورڈ انتظامیہ پابندہے کہ موجودہ خالی اسامیوں  کوایک مخصوص تناسب کے ساتھ موجودہ ملازمین کی ترقیوں کے ذریعے پر کرے تاہم انتظامیہ چاہتی ہے کہ ان اسامیوں پر باہرسے کچھ افرادکاتقررکیاجائے جس کے لیے پہلے ان اسامیوں کوتحلیل کرناضروری ہوگاان اسامیوں میں ’’اسسٹنٹ آڈٹ آفیسر،سینئرآڈیٹراکاؤنٹ اسسٹنٹ ‘‘کی  پوسٹ شامل ہیں۔

اس خبرکوبھی پڑھیں:  پی ٹی آئی پاپا، پپو اور پیسے ملک میں لانے کی کوشش کررہی ہے، فواد چوہدری

علاوہ ازیں اجلاس کے ایجنڈے میں موجودہ قائم مقام سیکریٹری بورڈ اور ڈپٹی کنٹرولر آف ایکزامینیشن زرینہ راشد کی درخواست کوبھی شامل کیاگیاہے جس میں انھوں نے ڈپٹی کنٹرولر آف ایکزامینیشن کی اسامی کوگریڈ 18سے 19 میں (بطورپرسنل اپ گریڈیشن) اپ گریڈکرنے کی سفارش کی ہے۔

دریں اثنا ’’ایکسپریس‘‘ کے رابطہ کرنے پر چیئرمین انٹر بورڈ پروفیسر انعام احمد کا کہنا تھا کہ کسی پروموشنل پوسٹ کوتحلیل نہیں کیاجارہاصرف ان اسامیوں کو ختم کریں گے جن پرترقی کے لیے عرصہ دراز سے ملازمین موجود ہی نہیں ہیں اوروہ ضائع ہورہی ہیں ان کاکہناتھاکہ نئی اسامیوں پرٹیسٹ کے ذریعے مارکیٹ سے اہل افراد کو لائیں گے کیونکہ اکاؤنٹس اورآڈٹ میں موجود ملازمین کی اتنی اہلیت نہیں کہ وہ ان پیشہ ورانہ معاملات کو سنبھال سکیں۔

The post انٹر بورڈ میں بھرتیاں تحریری ٹیسٹ سے مشروط کرنے کا فیصلہ appeared first on ایکسپریس اردو.